Main Menu

شنگھائی تعاون تنظیم کے سربراہان کے اجلاس میں پاکستان کی پہلی بار نمائندگی

شنگھائی تعاون تنظیم کے سربراہان کی کونسل کا 18 واں اجلاس اتوار کو چین کے شہر چنگ ڈاﺅمیں شروع ہوگیا۔ ابتدائی سیشن میں تمام رکن ممالک کے رہنماﺅں اور مبصرین نے شرکت کی۔ یہ اجلاس چنگ ڈاﺅکے بین الاقوامی کانفرنس سنٹر میں منعقد ہورہا ہے جس کی صدارت چین کے صدر شی جن پنگ کر رہے ہیں۔ چینی صدر کی دعوت پر صدر مملکت ممنون حسین اس اجلاس میں پاکستان کی نمائندگی کر رہے ہیں۔ تنظیم میں پاکستان کی مکمل رکنیت کے بعد یہ پہلا اجلاس ہو رہا ہے۔ اس سے قبل پاکستان بطور مبصر کانفرنس میں شرکت کرتا تھا۔
پاکستان کے صدر ممنون حسین نے اس موقع پر اپنی تقریر میںکہا کہ رابطوں میں اضافے، مشترکہ خوشحالی ، تجارت اور عوام کے درمیان رابطوں میں اضافے کے ذریعے شنگھائی تعاون تنظیم کے ایجنڈے کے اہداف حاصل کئے جا سکتے ہیں اور اسی سے خطے میں پائیدار امن ، ترقی اور استحکام کو یقینی بنایا جا سکتا ہے، علاقائی ترقی اور رابطوں کے تمام منصوبوں بشمول بیلٹ اینڈ روڈ اقدام اور اس کے مشعل بردار منصوبہ پاک چین اقتصادی راہداری کی کھلے دل سے حمایت کرنی چاہئے،ہمیں ایک دوسرے کے تاجروں کےلئے ایس سی او ویزہ سہولیات متعارف کرانے کے امکانات کا جائزہ لینا چاہئے،پاکستان افغانستان میں امن اور مفاہمت کےلئے اپنا تعاون جاری رکھے گا،شنگھائی تعاون تنظیم کی تمام اقوام عصر حاضر کے عالمی چیلنجوں سے نمٹنے میں کندھے سے کندھے ملا کر کھڑی ہوںگی اور پاکستان علاقائی امن اور خوشحالی کے لئے اپنا کردار ادا کرتا رہے گا۔ کانفرنس میں تنظیم کے آٹھ مستقل اور مبصر ممالک کے سربراہان و نمائندوں اور بین الاقوامی تنظیموں کے مندوبین نے شرکت کی۔






Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked as *

*