Main Menu

مقبوضہ کشمیر:کم سن بچی کے واقعے پر وزیراعلی کی خاموشی مجرمانہ ہے: علی گیلانی

مقبوضہ کشمےر میں کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین سید علی گیلانی نے جموں خطے کے ضلع کٹھوعہ میں آٹھ سالہ آصفہ بانو کی آبروریزی اور قتل کے المناک واقعے پر کٹھ پتلی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی مجرمانہ خاموشی پر انہیں کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ کٹھ پتلی انتظامیہ کی طرف سے اصل مجرموں کو تحفظ فراہم کرنے کی کوشش انتہائی افسوسناک ہے۔

سید علی گیلانی نے جموں خطے کے ضلع کٹھوعہ سے تعلق رکھنے والی کمسن بچی آصفہ کے اغوا ، بے حرمتی اور سفاکانہ قتل پر کٹھ پتلی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی مجرمانہ خاموشی کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ کشمیری عوام کو کوئی شک نہیں کہ یہاں کی کٹھ پتلی حکومت کو ناگپور سے کنٹرول کیا جارہا ہے۔

کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق سید علی گیلانی نے سرینگر سے جاری ایک بیان میں کہاکہ جس حکومت کے وزراءخود اپنے قوانین کی خلاف ورزی کررہے ہوں، ایسی کٹھ پتلی حکومت امن وامان بحال کرنے کا دعویٰ کیسے کرسکتی ہے؟ انہوں نے کٹھوعہ کے علاقے رسنا میں دفعہ 144کے نفاذکے باوجود بی جے پی کی طرف سے ایک عوامی جلسے کے انعقاد کو سرکاری غنڈہ گردی کی بدترین مثال قراردیا۔

دوسری جانب مقبوضہ کشمیر میں جموںوکشمیر لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک نے جموں خطے کے ضلع کٹھوعہ میں ایک کم عمر بچی کی آبرو ریزی اور قتل میں ملوث مجرموں کے حق میں ہندو ایکتا منچ اور بھارتیہ جنتا پارٹی کی ریلیوں کو انتہائی شرم ناک قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ہندو انتہا پسند اپنے حقیر مفادات کیلئے جموں خطے کو فرقہ پرستی کی نذر کرنے پر تلے ہوئے ہیں۔






Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked as *

*