Main Menu

ایوان بالا کے انتخابات میں ن لیگ، پی پی پی اور تحریک انصاف کی برتری

ہفتہ کو ہونے والے پاکستان کے ایوان بالا(سینیٹ ) کے انتخابات میں پنجاب میں مسلم لیگ نواز، سندھ میں پاکستان پیپلز پارٹی نے واضح اکثریت سے کامیابیاں حاصل کر لیں،دس آزا د امیدوار بھی منتخب ہو گئے جبکہ خیبر پختونخوا کی حکمران جماعت تحریک انصاف مجموعی طور پر چھ سیٹیں جیتنے میں کامیاب رہی۔

وفاق اور وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقوں (فاٹا) سمیت چاروں صوبوں میں 52 خالی سینیٹ نشستوں پر 133 امیدواروں کے درمیان مقابلہ ہوا۔مسلم لیگ 15، پی پی14،آزاد امیدوار10 ،تحریک انصاف 6، جمعیت علمائے اسلام دو،نیشنل پارٹی دو جبکہ جماعت اسلامی، ایم کیو ایم اور مسلم لیگ ق کا ایک ایک امیدوار سینیٹر بننے میں کامیاب رہا۔

حیران کن طور پر کراچی کی لسانی جماعت ایم کیو ایم کے دو دھڑوں میں سے ایک دھڑے کے امیدوار بیرسٹر فروغ نسیم سینیٹر بننے میں کامیاب رہے۔

مسلم لیگ ن کی جانب سے کامران ہونے والوں 15امیدواروںمیں اسدجونیجو اور مشاہد حسین کے علاوہ مسلم لیگ (ن) کے حمایت یافتہ ڈاکٹرمصدق ملک، آصف کرمانی, ہارون اختر، رانا مقبول، شاہین خالد بٹ ، رانا محمود الحسن ،سابق وزیر خزانہ اسحٰق ڈار ، حافظ عبدالکریم ،سعدیہ عباسی ، نزہت صادق اور کامران مائیکل شامل ہیں۔

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے امیدوار چوہدری سرور نے پنجاب سے کامیابی حاصل کر کے سب کو چونکا دیا۔

سندھ اسمبلی میں دوسری بڑی پارٹی متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) کے اندرونی تنازعات کا فائدہ اٹھاتے ہوئے پیپلز پارٹی نے سب سے زیادہ 10 نشستیں حاصل کرلی جبکہ ایم کیو ایم کو صرف ایک سیٹملی۔ایک سیٹ مسلم لیگ فنکشنل کے حصے میں آئی۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے کل 12 کامیاب امیدواروں میں رضا ربانی، مولا بخش چانڈیو، مصطفی نواز کھو کھر، امام الدین شوقین ، محمد علی جاموٹ ، سکندر میندھرو، رخسانہ زبیری،کرشنا کوہلی ،قرات العین مری اور اقلیتی نشست پر انور لال دین شامل ہیں۔

خیبرپختونخوا سے خواتین کی نشستوں پر پاکستان تحریک انصاف کی مہرتاج روغانی،ٹیکنوکریٹ کی نشستوں پر پی ٹی آئی کے اعظم سواتی ،جنرل نشستوں کے انتخاب میں پی ٹی آئی کے فیصل جاوید، ایوب آفریدی، فدا محمد کامیاب رہے۔

خیبر پختون خوا سے پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کی ثمینہ خالد، بہرمند تنگی ،پاکستان مسلم لیگ (ن) کے حمایت یافتہ دلاور خان،پیر صابرشاہ ،جمعیت علمائےاسلام (ف) کے طلحہ محمود اور جماعت اسلامی کے مشتاق احمد خان بھی سینیٹر بننے میں کامیاب رہے۔

بلوچستان میں 6 سینیٹرز کا انتخاب آزاد امیدوار کے طور پر کیا گیا جبکہ پشتونخوا ملی عوامی پارٹی (پی کے میپ) اور نیشنل پارٹی نے دو، دو نشستیں حاصل کی۔ایک سیٹ پرجمعیت علما اسلام (ف) کے مولانا فیض محمد جنرل نشست میں کامیاب ہوئے۔

وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقوں (فاٹا) سے آزاد حیثیت میں انتخابات میں حصہ لینے والے 4 سینیٹرز بھی کامیاب ہوگئے۔






Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked as *

*