Main Menu

نااہل نواز شریف پارٹی صدارت کے لیئے بھی نااہل

پاکستان کی سب سے بڑی عدالت، عدالتِ عظمیٰ(سپریم کورٹ) نے انتخابی اصلاحات ایکٹ کیس 2017 کے خلاف دائر درخواستوں کا متفقہ فیصلہ سنا تے ہوئے سابق وزیر اعظم نواز شریف مسلم لیگ (ن) کی صدارت کے لیے بھی نااہل قرار دے دیا ہے۔

فیصلہ چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے سنایا۔

چیف جسٹس نے کیس کا مختصر فیصلہ پڑھ کر سناتے ہوئے کہا کہ آئین کے آرٹیکل 62 اور 63 پر پورا نہ اترنے والا یا نااہل شخص پارٹی صدارت کا عہدہ نہیں رکھ سکتا، جبکہ اس فیصلے کا اطلاق اس وقت سے ہوگا جب اسے نااہل قرار دیا گیا ہو۔

یاد رے کہ گزشتہ برس اکتوبر میں انتخابی اصلاحات ایکٹ 2017 کی پارلیمنٹ سے منظوری کے خلاف سپریم کورٹ میں قانون دان ذوالفقار بھٹہ کی جانب سے آئین کے آرٹیکل 184/3 کے تحت درخواست دائر کی گئی تھی جس میں موقف اختیار کیا تھا کہ پارلیمنٹ کا منظور کردہ بل آئین کی روح سے متصادم ہے، کیونکہ اس کے تحت عدالت کی جانب سے نااہل قرار دیا گیا شخص پارٹی صدارت کے لیے اہل قرار پائے گا۔

مسلم لیگ ن کی صدارت کے لیئے شریف خاندان کے تین افراد کا نام لیا جا رہاہے۔ شہباز شریف اورمریم نواز کے علاوہ کلثوم نواز شریف کو بھی یہ ذمہ داری سونپی جا سکتی ہے۔






Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked as *

*