Main Menu

پاکستان امداد کی بحالی کی بجائے اپنی قربانیوں کا اعتراف چاہتا ہے: جنرل باجوہ

genBajwaAdressing

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہاکہ دہائیوں پر محیط تعاون کے باوجود امریکہ کی طرف سے حالیہ بیانات سے پوری پاکستانی قوم بددل ہوئی ہے۔متفقہ قومی ردعمل میں انہی جذبات کا اظہارکیا گیا۔

آرمی چیف نے کہاکہ امریکی مالی تعاون کے بغیر بھی پاکستان اپنے قومی مفاد میں دہشتگردی کے خلاف جنگ میں اپنی سنجیدہ کوششیں جاری رکھے گا۔انہوں نے کہاکہ پاکستان امداد کی بحالی کی بجائے دہشتگردی کے خلاف جنگ اورخطے میں امن واستحکام کےلئے اپنی قربانیوں ،کردار اور غیر متزلزل عزم کا باوقار انداز میں اعتراف چاہتا ہے۔

جنرل قمر جاویدباجوہ نے کہاکہ خطے میں طاقت کےلئے مقابلہ بازی سے پاکستان نے بھاری نقصان اٹھایاہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں افغان شہریوں کی سرگرمیوں کے حوالے سے امریکی تشویش سے بخوبی آگاہ ہیں۔جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہاکہ پاکستان یکطرفہ طورپر سرحدی انتظام کو مستحکم کرنے کےلئے اقدامات کررہاہے۔دوطرفہ سرحدی انتظام افغانستان کی بھی ترجیح ہونی چاہیے۔

انہوں نے کہاکہ پاکستان کو قربانی کا بکر ا بنانے کے رجحان کے باوجود افغانستان میں امن کےلئے تمام اقدامات کی حمایت جاری رکھیں گے۔کیونکہ خطے میں پائیدار امن واستحکام کے لئے افغانستان میں امن ضروری ہے۔

دوسری جانب کمانڈر سینٹ کام جنرل جوزف ایل ووٹل کا کہنا ہے کہ امریکہ دہشتگردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کے کردار کو قدر کی نگاہ سے دیکھتاہے۔توقع ہے کہ دوطرفہ تعلقات میں تناو عارضی ہوگا۔کمانڈر سینٹ کام نے آرمی چیف کو بتایاکہ امریکہ پاکستان میں کسی یکطرفہ کارروائی پر غور نہیں کر رہا۔انہوں نے اتفاق کیاکہ باہمی تعاون سے مشترکہ مقاصد کاحصول ممکن ہے۔






Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked as *

*