Main Menu

ہمیں نئی اور درست سمت کا تعین کرنا ہو گا: وزیرخارجہ پاکستان

khawajaAsifFM

وزیر خارجہ خواجہ محمد آصف نے کہا ہے کہ دنیا دہشت گردی کیخلاف جنگ میں ہمارے تجربے سے استفادہ کرے، پاکستان کے بغیر یہ جنگ جیتی نہیں جا سکتی، ہماری بقا داﺅپر لگی ہے اس لئے ہم سے بہتر کوئی جنگ لڑ نہیں سکتا، دنیا تسلیم کرے یا نہ کرے ہم یہ جنگ جیت رہے ہیں۔

جمعرات کو تین روزہ سفرا کانفرنس کے اختتام پر دفتر خارجہ میں پریس بریفنگ سے خطاب اور صحافیوں کے مختلف سوالوں کا جواب دیتے ہوئے خواجہ آصف نے کہا کہ ہمیں دنیا کے نقطہ نظر کو درست کرنا ہے، ملک و قوم کو دہشت گردی سے محفوظ رکھنا ہماری اولین ترجیح ہے،دہشت گردی کیخلاف جنگ میں ہماری فورسز اور عوام کی لازوال قربانیوں کی دنیا میں مثال نہیں ملتی۔ خطے میں نئی تبدیلیاں اور صف بندیاں ہو رہی ہیں ہمیں بھی نئی اور درست سمت کا تعین کرنا ہو گا، امریکہ کیساتھ باہمی عزت و احترام کی بنیاد پر تعلقات چاہتے ہیں لیکن ملکی مفادات پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائیگا۔

وزیر خارجہ نے کہا 80ءکی دہائی کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان نے اس عرصہ میں کیا کھویا اور کیا پایا ہے اس بات کا تعین تو مورخ کریگا لیکن ہم نے کھویا زیادہ ہے اور پایا کچھ نہیں۔ انہوں نے کہا کہ دوسری جنگ عظیم کے بعد دنیا بالخصوص خطے میں تیزی سے تبدیلیاں رونما ہو رہی ہیں، نئے اتحاد بن رہے ہیں اور نئی صف بندیاں ہو رہی ہیں۔ اس صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے ہمیں بھی ایک نئی اور درست سمت کا تعین کرنا ہو گا۔

انہوں نے کہا کہ چین اور روس اس خطے کی دو بڑی طاقتیں ہیں جبکہ افغانستان کے حوالے سے روس انتہائی اہم اور موثر کردار ادا کر سکتا ہے۔دہشت گردی کیخلاف جنگ کے حوالے سے خواجہ آصف نے کہا کہ دنیا دہشت گردی کیخلاف جنگ میں ہماری کامیابیوں کو مختلف نقطہ نظر سے دیکھتی ہے،ہمیں اس نقطہ نظر کو درست کرنا ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان دنیا کا واحد ملک ہے جو یہ جنگ جیت رہا ہے اور جلد کامیابی سے ہمکنار ہو گا۔ملک اور بیس کروڑ عوام کو دہشت گردی سے محفوظ رکھنا ہمارا نصب العین اور اولین ترجیح ہے۔






Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked as *

*