Warning: Invalid argument supplied for foreach() in /customers/5/9/3/siasatpakistan.com/httpd.www/wp-content/themes/newspress-extend/function/imp.php on line 26
Main Menu

’اپوزیشن کو محمد بن سلمان کے عشائیے میں نہ بلانے کی وجہ ان کے خلاف کیسز ہیں‘

وفاقی وزیرِ اطلاعات فواد چوہدری نے سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے لیے شیڈول عشائیے میں اپوزیشن کے مرکزی رہنماؤں کو نہ بلانے کی وجہ کو ان کے خلاف کیسز سے جوڑ دیا۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے ایک پیغام میں فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ ’قومی اسمبلی میں اپوزیشن رہنماؤں کو کیسے بلائیں جبکہ وہ بدعنوانی کے مقدمات میں جیلوں میں ہیں یا پھر ضمانتوں پر رہا جو شامل تفتیش ہیں۔’

ان کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کے جو رہنما اس کے علاوہ باقی رہ گئے ہیں ’وہ اس قد کے ہی نہیں‘ کہ انہیں عشائیے میں مدعو کیا جائے کیونکہ انہیں بلانا نہ بلانا برابر ہے۔

وفاقی وزیر نے قومی اسمبلی میں سنجیدہ اپوزیشن کے نہ ہونے کو سیاسی بحران قرار دیتے ہوئے کہا کہ مستقبل میں ہی کوئی اپوزیشن لیڈرشپ سامنے آئے گی، ابھی تو کوئی موجود نہیں ہے۔

’اپوزیشن کے بغیر حکمرانوں کو شرمندگی ہوگی‘

ادھر پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے سیکریٹری جنرل اور سابق چیئرمین سینیٹ نیئر بخاری نے فواد چوہدری کے بیان پر ردِعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی ولی عہد صرف وزیر اعظم کے نہیں بلکہ پوری ریاست کے مہمان ہیں اور انہیں دیے جانے والے عشائیے میں آدھی پارلیمنٹ کو مدعو نہیں کیا گیا۔

نیئر بخاری کا کہنا تھا کہ ریاست کی نمائندگی صرف حکومتی ارکان سے نہیں بلکہ پارلیمنٹ کے تمام منتخب نمائندوں سے ہوتی ہے۔

پی پی پی رہنما کا کہنا تھا کہ اپوزیشن سے ناراضگی کی قیمت پر قومی وقار کو مجروح کیا جا رہا ہے، جبکہ پارلیمانی آداب سے نابلد وزیراعظم ظرف سے بھی عاری ہیں۔

نیئر بخاری نے حکومت کو ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا کہ اپوزیشن کی غیر موجودگی سے حکمرانوں کو سعودی ولی عہد کے سامنے اپنی پوزیشن باعث شرمندگی محسوس ہوگی۔

سعودی ولی عہد کے دورے کی تیاریاں

واضح رہے کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کے ہمراہ شاہی خاندان کے اہم افراد کے ساتھ ساتھ وزرا اور کاروباری شخصیات پر مشتمل ایک بڑا وفد بھی پاکستان آئے گا۔

ان کے دورے کے دوران سیکیورٹی انتظامات کو حتمی شکل دینے کے لیے 125رکنی سعودی ایڈوانس ٹیم، جن میں سیکیورٹی ڈپارٹمنٹ، ہیلتھ ڈپارٹمنٹ اور حرمین شریفین ڈیپارٹمنٹ کے علاوہ کراؤن پرنس ڈپارٹمنٹ اور ڈیفنس ڈپارٹمنٹ کے اہلکاروں پر مشتمل ٹیم شامل تھی، اسلام آباد کے نور خان ایئر بیس پہنچی تھی۔







Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked as *

*